آہ 2007ء


ہر گذرتا سال یہ سوچنے پر مجبور کر رہا ہے کہ اس سے زیادہ برا سال پہلے نہیں گذرا۔2001ء میں نیویارک اور واشنگٹن پر حملے، 2002ء میں افغانستان اور 2003ء میں عراق پر امریکی جارحیت، 2004ء کے آخری ایام میں سونامی اور 2005ء پاکستان میں تباہ کن زلزلہ اور پھر 2006ء سے پاکستان میں بدستور بگڑتی سیاسی صورتحال جو 2007ء میں پہلے چیف جسٹس کی برطرفی اور پھر ان کی بحالی کی تحریک اور اس دوران 12 مئی جیسے اندوہناک واقعات، سقوط ڈھاکہ کے بعد ملکی تاریخ کے دوسرے سب سے بڑے سانحۂ لال مسجد اور پھر خود کش بم دھماکوں اور سیاسی بحران کے لامتناہی سلسلہ اور بالآخر پاکستان کی ایک بڑی سیاسی جماعت پیپلز پارٹی کی رہنما بے نظیر بھٹو کے قتل پر منتج ہوئی بہت کچھ سوچنے پر مجبور کر رہی ہے۔ پاکستان کو 1971ء کے علاوہ شاید ہی کبھی اتنی نازک صورتحال سے گذرنا پڑا ہو۔ پرویز مشرف نے یہ کہہ کر امریکہ کی جنگ میں کودنے کی حامی بھری کہ اس کے سوا کوئی چارہ نہ تھا اور انکار کی صورت میں "پتھر کے دور" میں پہنچانے کی دھمکی دی گئی تھی، کیا اس سے زیادہ بھی کوئی پتھر کا دور آئے گا؟ اتنا ظلم تو شاید پتھر کے دور میں بھی نہ ہوتا ہوگا۔ سوچیے کہ کیا ہم یونہی ہاتھ پر ہاتھ دھرے یہ تماشہ دیکھتے رہیں گے اور اتنی قربانیوں سے حاصل کیا گیا ملک یونہی لٹیروں اور قاتلوں کے ہاتھوں ذلیل ہوتا رہے گا۔ آخر ہم کب جاگیں گے؟

آپ یہ صفحات بھی دیکھنا پسند کریں گے ۔ ۔ ۔

2 تبصرے

  1. حافظ عطاء اللہ says:

    السلام علیکم
    ابو شامل صاحب
    میرے خیال میں اس سال کے نتایج پر غور کیا جایے تو یہ بات واضح ہوجاتی ہے کہ انگریزی نظام ہایے زندگیوں میں مسلمانوں کے لیے واضح طور پر کویی ہمدردی نہیں بچی ہے، لہاذا سب مسلمانوں کو چاہیے کہ جلد از جلد خلافت اسلامیہ کے قیام کے لیے عسکری کوششوں کے ساتھ ساتھ تنظیمی تسلط کے لیے بہی تیاریاں اور کوششیں کی جاییں اور لادین عناصر کی بیخ کنی کے لیے واضح اور بے لچک لایحہ عمل اپنایا جایے

  2. فرحت کیانی says:

    السلام علیکم فہد
    کاش کوئی پرویز مشرف سے پوچھے کہ ان کے نزدیک 'پتھر کے دور' کی تعریف کیا ہے؟ جتنی بے سکونی اور افراتفری اس وقت پاکستان میں ہے اس سے زیادہ کیا ہو سکتا ہے۔۔
    نئے سال کے لیے دعا ہے کہ اللہ تعالیٰ ہم سب پر رحم کرے اور آنے والا وقت امن اور سکون کی نوید لے کر آئے۔۔۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.