کرک نامہ، اک خواب کی تعبیر

کرک نامہ - cricnama.com

جب 2007ء میں میں نے بلاگنگ کا آغاز کیا تو اس وقت میرا لکھنے کا تجربہ صفر تھا سوائے ایک شعبے کے اور وہ شعبہ تھا کھیلوں کا۔ ایک معروف خبر رساں ادارے میں میں نے تقریبا دو سال کھیلوں کی خبریں بنانے کا کام کیا تھا اور اس کے علاوہ بھی بچپن سے کھیلوں خصوصا کرکٹ میں دلچسپی بہت زیادہ رہی ہے۔ یہ دلچسپی مجھے وراثت میں ملی تھی۔ والد مرحوم کرکٹ کے بہت بڑے شائق تھے۔ ان کے ساتھ گزارے گئے کئی دن مجھے بہت یاد آتے ہیں خصوصا وہ دن جب آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ میں ہونے والے پاکستان میچز کے دوران وہ رات ساڑھے تین بجے مجھے اٹھایا کرتے تھے کہ اٹھو! میچ شروع ہونے والا ہے۔

بہرحال، جب میں نے محب علوی کے دھکا دینے پر بلاگنگ کا آغاز کیا تو ذہن میں یہ بات پہلے روز سے چپکی ہوئی تھی کہ مجھے کھیلوں پر لکھنا چاہیے لیکن کیونکہ میں خبر بنانے میں معیار کا عادی تھا اور کوئی کام ادھورا چھوڑنا مجھے نہیں بھاتا اس لیے میں نے تمام تر خواہش کے باوجود کھیلوں کی خبروں پر مبنی بلاگ کا آغاز نہ کیا کیونکہ میں خود کو اتنا اہل نہیں پاتا تھا کہ اکیلے اس بلاگ کو چلا پاؤں۔

اب خدا نے یہ دعا قبول کر لی ہے اور محمد اسد کی صورت میں خبر بنانے کی صلاحیت رکھنے والا، بلاگ کی تکنیکی باریکیوں کو جاننے والا اور  کھیلوں میں زبردست دلچسپی کا حامل اک ہمہ جہت نوجوان ملا ہے جس کے ساتھ میں نے اپنے اک دیرینہ خواب کو مکمل کیا ہے۔ وہ خواب جو میں نے 4 سال قبل بلاگنگ کے آغاز کے موقع پر دیکھا تھا اور بارہا مختلف بلاگرز سے انفرادی محفلوں میں ذکر کیا تھا۔ اس خواب کی تعبیر کا نام ہے "کرک نامہ"

سال گزشتہ کے آخری دو ماہ میں اور محمد اسد نے کرک نامہ کا بنیادی ڈھانچہ ترتیب دیا تاکہ ہم سال نو کے آغاز کے ساتھ ہی کرک نامہ کا آغاز کر سکیں۔ ان دو ماہ میں بلاگ کے نام، اس پر کام کرنے کے طریقے، تکنیکی ڈھانچے کو کھڑا کرنے، تھیم کے انتخاب اور پلگ انز کے ذخیرے سے لے کر اس بلاگ کے لیے طویل المیعاد پالیسی تک سب کچھ زیر غور آیا۔ الحمد للہ ثم الحمد للہ ہم ان تمام مراحل سے بخوبی گزرے اور ڈیڈ لائن یعنی یکم جنوری 2011ء کو کرک نامہ کا آغاز کرنے میں کامیاب ہو گئے۔

آغاز کے ساتھ ہی ہمیں جو چیلنجز درپیش آئے وہ دنیائے کرکٹ میں چہار سو جاری سرگرمیوں کا احاطہ کرنا تھا۔ پاکستانی ٹیم نیوزی لینڈ میں بلیک کیپس کا سامنا کر رہی ہے، بھارت جنوبی افریقہ کے دورے پر موجود ہے، انگلستان آسٹریلیا کی سرزمین پر ایشیز کا میدان مارنے کے بعد ایک طویل ایک روزہ میچز کھیل رہا ہے۔ دوسری جانب عالمی کپ 2011ء قریب ہے اور دنیا بھر کی ٹیمیں اپنے کھلاڑیوں کے ناموں کا اعلان کر رہی ہیں۔ یہ شیڈول بہت سخت ہے لیکن آگے عالمی کپ کی صورت میں بھی ہمیں ایک سخت چیلنج درپیش ہے تاہم ہم پوری طرح تیار ہیں اور امید ہے کہ ہم اس امتحان میں سرخرو ہوں گے۔

میں خاص طور پر دو افراد کا ذکرکرنا چاہوں گا جن کے سامنے میں نے ماضی میں بھی کرکٹ بلاگ کی خواہش کا اظہار کیا تھا اور اب بھی اس کے آغاز پر ان دونوں افراد نے بہت حوصلہ افزائی کی۔ میں عمار ابن ضیاء اور محب علوی کا تہہ دل سے شکر گزار ہوں۔ اور آخر میں سب سے زیادہ محمد اسد کا کہ جنہوں نے ابتدائی دنوں میں تکنیکی ڈھانچہ کھڑا کیا، تھیم اور لوگو ڈیزائن کیے، اپنی تحریری صلاحیتوں سے اچھی تحاریر لکھیں اور بلاگ کے آغاز اور اسے چلانے میں اہم کردار ادا کیا۔

مجھے امید ہے کہ عالمی کپ 2011ء کے آغاز تک یہ بلاگ اپنی ساکھ بنانے میں کامیاب ہو جائے گا اور کرکٹ کے دیوانے پاکستانی حلقوں میں مقبول ہو جائے گا۔ ہماری کوشش ہوگی کہ معیاری تحاریر اور تجزیوں کے ذریعے اسے ایک مثالی اردو بلاگ بنائیں۔ اس سلسلے میں صرف اور صرف قارئین کی حوصلہ افزائی کی ضرورت ہوگی۔

آپ یہ صفحات بھی دیکھنا پسند کریں گے ۔ ۔ ۔

27 تبصرے

  1. دوست says:

    اللہ اس کا آغاز مبارک کرے۔ امین کرتا ہوں کہ فلمی تبصروں والے بلاگ کی طرح دو ماہ میں اس پر کام ٹھنڈا نہ پڑ جائے۔

    • ابوشامل says:

      بھائی صاحب! فلمی تبصروں والا بلاگ دراصل میرے والد کے انتقال کے بعد میری غیر حاضری کے باعث رک گیا تھا۔ اس کی مجھے اوروں سے توقع نہ تھی کہ وہ بھی اسے چھوڑ دیں گے۔ ویسے گزشتہ چند دنوں میں چند نئی تحاریر وہاں میں نے اور عمار ضیاء نے پیش کی ہیں، آپ جا کر دیکھ سکتے ہیں۔

  2. مولوی says:

    بھائ جی کرکٹ تو حرام ھے ۔

  3. کرکٹ پر ایک اچھے موضوعاتی بلاگ کے آغاز پر مبارکباد قبول کریں۔

    • ابوشامل says:

      خیر مبارک وقار۔ ویسے یہ مبارکباد اس وقت لی جانی چاہیے جب ہم اس بلاگ کی ایک سالگرہ منا لیں 🙂

  4. مکی says:

    مبارک ہو حضور.. آغاز تو بہت دھماکے دار ہے اگرچہ مجھے کھیلوں سے کوئی دلچسبی نہیں ہے..

    • ابوشامل says:

      مکی بھائی، کھیلوں میں دلچسپی نہ ہونے کے باوجود حوصلہ افزائی کا شکریہ

  5. جعفر says:

    ایک دفعہ پھر مبارکباد
    مجھے امید بلکہ یقین ہے کہ یہ بلاگ سپر ڈوپر ہٹ ثابت ہوگا
    اسد میاں کے متعلق میری پیشین گوئی بالکل درست ثابت ہورہی ہے
    اب میں سنجیدگی سے پیشین گوئیوں والا کاروبار شروع کرنے بارے سوچنے لگا ہوں

    • ابوشامل says:

      جعفر میان، ہماری تو یہی کوشش ہوگی کہ یہ مستقل بنیادوں پر چلے اور واقعی سپر ہٹ ہو لیکن اس میں ہماری تحاریر سے زیادہ قارئین کی حوصلہ افزائی کی اہمیت ہے۔

  6. ابو شامل بھائی!
    ہم دیکھیں گے کہ آپ کتنے دنوں میں اس سے بور ہوتے ہیں۔

    • ابوشامل says:

      ہاہاہا ۔۔۔۔ جاوید صاحب میں تو بور ہو جاؤں گا لیکن اس پر میں اکیلا نہیں ہوں۔ امید ہے کہ مجھے کچھ بھی ہو جائے وہ بندہ بور نہیں ہوگا۔

  7. ماشاء اللہ بہت اچھا آغاز اور بہت ہی عمدہ ڈیزائن کیا ہے، یقینا کھیلوں سے دلچسپی رکھنے والوں کے لیے ایک اچھا بلاگ ثابت ہوگا۔

  8. زبردست ابو شامل،
    ہمم تو یہ عمدہ کام میں بھی آپ کا ہاتھ ہے اور ساتھ میں ایک اور فعال ساتھی کو شامل کیا ہے۔ کرکٹ پر یہ بہت خوبصورت بلاگ ہے اور میری نیک تمنائیں آپ کے ساتھ ہیں۔
    انتہائی عمدہ کاوش ہے اور مجھے یقین ہے وقت کے ساتھ ساتھ یہ بہتر سے بہتر ہوتا جائے گا۔
    میرا مشورہ ہے کہ گاہے گاہے اپنے بلاگ پر اس سائٹ کے متعلق تبصرہ کرتے رہیں تو یہ اس کے حق میں بھی بہت اچھا ہوگا اور قارئین بھی بڑھیں گے۔

    • ابوشامل says:

      شکریہ محب بھائی۔
      مجھے زیادہ خوشی اس وقت ہوگی جب یہ بلاگ اسی تب و تاب کے ساتھ اپنی پہلی سالگرہ مکمل کرے گا۔
      میں کوشش کروں گا کہ ابوشامل ڈاٹ کام پر اس بارے میں کچھ پیش کرتا جاؤں لیکن جس طرح کا مواد وہاں پیش کیا جا رہا ہے مجھے امید ہے کہ تشہیری مقاصد کے لیے ابوشامل ڈاٹ کام کو استعمال کرنے کی ضرورت پیش نہیں آئے گی 🙂

  9. اردو بلاگستان میں ایک اور موضوعاتی بلاگ کا اضافہ خوش آئند بات ہے۔

  10. بہت مبارک ہو فہد صاحب، یہ بہت نیک کام شروع کیا آپ نے۔

    • ابوشامل says:

      خیر مبارک وارث صاحب۔ آپ جیسے سینئر ساتھیوں کی حوصلہ افزائی اور رہنمائی درکار ہے۔

  11. فیصل says:

    میری جانب سے دلی مبارک باد اور نیک تمنائیں، گرچہ مجھے پاکستانی ٹیم کے پے در پے سکینڈلز کے بعد کرکٹ میں اتنی دلچسپی نہیں رہی لیکن بہرحال روایتی حریفوں کے میچ مثلا انڈیا/ پاکستان یا آسٹریلیا/ انگلینڈ دیکھ لیا کرتا ہوں۔
    میں ہمیشہ سے ہی موضوعاتی بلاگنگ کا بہت بڑا حامی رہا ہوں اور اردو میں تو ایسے بلاگز کی بہت ہی زیادہ کمی ہے۔ اس میں کچھ قصور تو بلاگ کی پرانی تعریف کا ہے کہ بلاگ بہت ذاتی قسم کی سائٹ ہوتا ہے۔ ایسے میں ایک شخص کی عموماً ایک سے زیادہ موضوعات میں دلچسپی ہونا قدرتی بات ہے۔ دوسری اور زیادہ اہم بات یہ ہے کہ بحیثیت قوم ہمیں اجتماعی کام کرنے کی تربیت سکول، کالج یا جامعہ میں کہیں نہیں دی جاتی۔ جس قسم کے کمٹمنٹ، صبر، اور کھلے دل کی ایسے منصوبوں میں ضرورت ہوتی ہے، وہ عموماً ہم میں عنقا ہوتی ہے۔ ایک اہم کمی پلاننگ کی بھی ہے اور ہم عموماً جذباتیت اور ذاتی روابط سے کام چلانے کی کوشش کرتے ہیں۔ نتیجہ یہ کہ ایک بندہ کوئی بھی اچھا کام کرتے کرتے جلد ہی تھک جاتا ہے۔ امید ہے آپ اس بات کو ذہن میں رکھ کر مستقبل کو دیکھ رہے ہونگے۔
    پہلی بات کی جانب آتا ہوں کہ بلاگ کی تعریف وقت سے ساتھ ساتھ بہت بدل گئی ہے۔ آپکی سائٹ بھی بلاگ سے زیادہ کمرشل سائٹ ہے (اور اسی لیے ڈاٹ کام پر رجسٹرڈ ہے) جو کہ اچھی بات ہے۔ کسی بھی کام کیلیے پیسے کی ضرورت ہوتی ہے اور میں آپکو یقیناً اس بات کی ترغیب دونگا کہ اس سائٹ سے کم از کم اتنے پیسے ضرور کمانے کی کوشش کریں کہ یہ اپنا خرچہ بھی اٹھائے اور رضاکاروں کیلئے چائے پانی کا بھی بندوبست کر سکے۔ ورنہ رضاکار بھی جلد ہی بھاگ جائیں گے۔ شروع میں آپکو کافی محنت کرنا پڑیگی لیکن کیا اردو میں ایک بھی اچھی سائٹ کرکٹ سے متعلق ہے؟ کم از کم میرے علم میں تو نہیں۔ اچھی تحاریر، مناسب اشتہار بازی اور کرکٹ سے متعلق فورمز میں شمولیت سے آپکی سائٹ پر ٹریفک بڑھے گی جو اسکی آمدن کی ضامن ہے۔ مواد میں صرف خبریں نہیں بلکہ کرکٹ سے متعلق دیگر معلومات کا بھی اضافہ کریں۔ کرکٹ کی تاریخ، مقامی (ضلعی/ صوبائی/ کلب) سطح پر کرکٹ کی سرگرمیوں کی کوریج، کھلاڑیوں کی پروفائلز اور خبریں وغیرہ وغیرہ کچھ مواد بن سکتا ہے۔
    امید ہے اس لمبے تبصرے پر مائنڈ نہیں کریں گے اور میری تنقید کو مثبت لیں گے۔

    • ابوشامل says:

      فیصل بھائی! سب سے پہلے تو نیک تمناؤں کا بہت شکر گزار ہوں۔ ہم بھی 99ء کے عالمی کپ سے قبل کرکٹ گزیدہ تھے، بعد میں ٹھنڈے پڑ گئے۔ مجھے یاد نہیں کہ اس کے بعد کوئی عالمی کپ پہلے والی دلچسپی کے ساتھ دیکھا ہو۔ بہرحال چنگاریاں ابھی تک خاکستر میں موجود ہیں 🙂
      آپ نے جن اہم سمتوں میں اشارے کیے ہیں خوش قسمتی سے ہم نے ایک ماہ کی منصوبہ بندی کے دوران ان میں سے بیشتر پر غور کیا ہے اور یہ بات بالکل واضح طور پر پہلے دن سے ہمارے ذہنوں میں تھی کہ اس بلاگ کا مقصد جہاں اردو میں اک اہم کمی کو پورا کرنا ہے وہیں revenue generation بھی ہے۔ اس کے لیے ہم مارکیٹنگ کی مختلف حکمت عملیاں اپنائیں گے لیکن وقت کے ساتھ ساتھ، بلکہ اس وقت جب سائٹ مکمل طور پر مستحکم ہو جائے اور اس قابل ہو گی کہ revenue جنریٹ کر سکے۔
      شاید یہی وجہ ہے کہ ہم نے رضاکاروں کی فوج جمع نہیں کی، ورنہ ہو سکتا ہے کہ فلمستان والی صورتحال یہاں بھی پیدا ہو جائے کہ ایک میرے غائب ہونے سے پورا بلاگ ٹھنڈا پڑ گیا اور کسی نے اس کی جانب نظر نہیں کی۔ خیر، اب میں نے وہاں بھی ایک قائم مقام منتظم کا انتظام کیا ہے۔ امید ہے کہ آئندہ آپ کو سوائے ابوشامل ڈاٹ کام کے میرے کسی اور بلاگ سے ایسی شکایت نہیں ہوگی۔ تو میں عرض کر رہا تھا کہ ہم نئے اور قابل رضاکار اس وقت بھرتی کریں گے جب ہم انہیں کچھ مشاہرہ دے سکیں اور سائٹ کو اچھی سمت میں چلا سکیں۔ فی الوقت تو ہمیں کئی ایسے مسائل درپیش ہیں جو نئے بلاگز اور سائٹس کے سامنے آتے رہتے ہیں۔ دعا ہے کہ عالمی کپ بخیریت گزر جائے گا اور سائٹ مزید کسی مسئلے کا شکار نہیں ہو۔
      آخر میں آپ کے مشوروں کا بہت شکریہ۔ ان میں سے بیشتر ہمارے طویل المیعاد اہداف کی فہرست میں ہوں گے کیونکہ فی الوقت تمام کاموں کے لیے نہ ہمارے پاس وسائل ہیں اور نہ ہی اتنی بڑی ٹیم۔

  12. ابوشامل صاحب اور اسد صاحب آپ حضرات کو کرک نامہ شروع کرنے پر مبارکباد۔۔ میری رائے مکمل طور پر وہی ہے جو فیصل صاحب کا تبصرہ ہے۔۔ اللہ تعالی آپ لوگوں کو کامیابی نصیب کرے۔

    • ابوشامل says:

      چلیے راشد بھائی کسی بہانے آپ بلاگستان میں نظر تو آئے 🙂 حضور! ایسی بھی کیا بے رخی اپنے بلاگ سے؟ 🙂

  13. سایئں جی۔۔۔ کام شروع کریں۔۔۔
    قدم بڑھاو ابو شامل۔۔۔
    ہم تمہارے ساتھ ہیں۔۔۔

  14. حامدالرحمن says:

    السلام علیکم ،شامل بھائ کیسے ہیں آپ ، خاموشی سے بغیر بتائے بلاگ بنابھی لیا، مجھے بھی اسپورٹس میں دلچپسی ہے کوئی کام ہو تو ضرور بتاییں، اللہ آپ کو کامیاب کرے

    • ابوشامل says:

      حامد بھائی! بلاگ پر خوش آمدید۔ خاموشی سے تو نہیں بنایا یہاں اعلان کر تو دیا ہے 🙂
      ہمیں کرکٹ پر لکھنے کے لیے رضاکاروں کی ضرورت ہے چاہے وہ کسی بھی موضوع پر لکھیں،میچ کی رپورٹس بنائیں یا کھلاڑیوں کی پروفائل، کرکٹ کی تاریخ پر لکھیں یا دلچسپ واقعات پر۔ اگر اس سلسلے میں آپ ہمارے ساتھ تعاون کر سکتے ہیں تو ہمیں بہت خوشی ہوگی۔

  15. web hosting says:

    It's always nice when you can not only be informed, but also get knowledge, from these type of blog, nice entry. Thanks

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.