ہم مصطفوی ہیں

1974ء کی اسلامی سربراہی کانفرنس پاکستان کی تاریخ کا ایک اہم موقع تھا جب اتحاد کی خواہش لیے دنیا بھر کے مسلم ممالک کے درمیان قربتوں میں اضافہ ہو رہا تھا۔ اسلامی سربراہی کانفرنس کے موقع پر ایک ترانہ پاکستان ٹیلی وژن اور ریڈیو پر نشر کیا جاتا تھا۔ یہ ترانہ مہدی ظہیر کی انوکھی آواز میں گایا گیا "ہم مصطفوی ہیں" تھا جو دیکھتے ہی دیکھتے شہرت کی بلندیوں پر پہنچ گیا۔ مہدی ظہیر کی زندگی کا یہ پہلا اور آخری گانا تھا۔ آپ ریڈیو پاکستان میں بطور میوزک ڈائریکٹر کام کرتے تھے۔ اس ترانے نے انہیں لازوال حیثیت دے دی۔ شاعری شاید جمیل الدین عالی صاحب کی ہے (تصدیق درکار ہے)۔
آجکل عرصہ بعد یہ ترانہ ایک مرتبہ پھر ٹیلی وژن اسکرینوں کی زینت بنا ہوا۔ دودھ اور اس سے تیار کی گئی اشیاء بنانے والی کمپنی "اینگرو فوڈز" نے "اولپرز دودھ" کے لیے رمضان المبارک میں ایک شاندار اشتہار بنانے کی روایت کو برقرار رکھتے ہوئے اس مرتبہ "ہم مصطفوی ہیں" کو استعمال کیا ہے۔ اشتہار میں یہ ترانہ معروف گلوکار عاطف اسلم اور کینیڈا سے تعلق رکھنے والے نو مسلم گلوکار داؤد وارنسبائی علی (Dawud Wharnsby Ali) نے گایا ہے جبکہ یہ پاکستان، انڈونیشیا، برونائی اور مراکش میں فلمایا گیا ہے۔ اس میں دنیائے اسلام کی تین مشہور مساجد [[بادشاہی مسجد]]، لاہور پاکستان؛ [[سلطان عمر علی سیف الدین مسجد]]، بندر سری بیگوان، برونائی دارالسلام؛ اور [[مسجد حسن ثانی]]، [[دار البیضاء]] (کیسابلانکا)، مراکش کے خوبصورت مناظر بھی پیش کی گئے ہیں۔
ذیل میں اس ترانے کی شاعری اور اشتہار کی وڈیو پیش کی جا رہی ہے۔ شاعری میں کسی غلطی کی نشاندہی اور شاعر کی تصدیق کرنے والے کا بے حد مشکور و ممنون ہوں گا۔

ہم مصطفوی ہیں (ترانۂ ملت)

ہم تا بہ ابد سعی و تغیر کے ولی ہیں
ہم مصطفوی، مصطفوی، مصطفوی ہیں

دین ہمارا دین مکمل استعمار ہے باطل ارذل
خیر ہے جدوجہدِ مسلسل
عند اللہ (4 مرتبہ)
اللہ اکبر (4 مرتبہ)

سبحان اللہ سبحان اللہ سبحان اللہ سبحان اللہ یہ وحدت فرقانی
روحِ اخوت، مظہرِ قوت، مرحمتِ رحمانی
سب کی زبان پر سب کے دلوں میں اک نعرۂ قرآنی
اللہ اکبر (4 مرتبہ)

امن کی دعوت کل عالم میں، مسلک عام ہمارا
دادِ شجاعت دورِ ستم میں یہ بھی کام ہمارا
حق آئے باطل مٹ جائے یہ پیغام ہمارا
اللہ اکبر (4 مرتبہ)

آپ یہ صفحات بھی دیکھنا پسند کریں گے ۔ ۔ ۔

16 تبصرے

  1. شاعر تو سو فیصد جمیل الدین عالی ہیں. شاعری کی تو شاید محمد وارث ہی توثیق کرسکیں گے.
    نغمہ عمدہ بنایا ہے.. نعمان کے بلاگ پر بھی پہلے دیکھا تھا اور تخلیقی عمل کے حساب سے اچھے نمبر ملنے چاہییں

  2. اس نغمے نے واقعی مقبولیت حاصل کی تھی اور کانفرنس کے سلسلہ میں حکمرانوں کی کچھ غیرقومی کوشش اور بھونچکیوں پر پردہ پڑ گیا تھا

  3. اس ترانے کو لکھا ، گایا اور کمپوز بھی مہدی ظہیر نے ہی کیا تھا ، یہ ایک طویل ترانہ تھا ، جسے اس وقت پی ٹی وی نے ریکارڈ کیا تھا ، اس اشتہار میں ایک بند استعمال کیا گیا ہے

    اور فلمائزئشن تو واقعٰی ہی خوب ہے

  4. نبیل says:

    شکریہ فہد۔
    یہ گیت سن کر مجھے بھی بہت اچھا لگا تھا، لیکن اسے دودھ کے اشتہار میں استعمال کرنا مجھے قدرے بدذوقی محسوس ہوا ہے۔

  5. کینیڈا سے تعلق رکھنے والے نو مسلم گلوکار داؤد وارنسبائی علی (Dawud Wharnsby Ali) کیسابلانکا میں ہی رہائش پزیر ہیں

  6. بہت اچھا گیت ہے، تاہم دودھ کے اشتہار میں استعمال کرنے کافی زیادہ بدذوقی اور زیادتی کی بات ہے، اگر گیت کو ری مکس کرنا ہی مقصود تھا تو کسی ڈھنگ سے کیا جاتا، اپنی پروڈکٹ بیچنے کے لیے قومی اور مذہبی گیت کو استعمال کرنا اخلاقا جرم کے ذمرے میں آتا ہے

  7. یہ دودھ بیچنے والے کب سے........... آہو

  8. بہت خوبصورت ہے

  9. راشد، اظہر، یاسر، قدوس اور فرحان صاحبان! تبصرے کے لیے مشکور ہوں۔
    اجمل صاحب! بھٹو نے اس کانفرنس سے ایک بہت اہم کام نکلوایا تھا کہ اس میں اہم مسلم ممالک سے بنگلہ دیش کو تسلیم کروا لیا اور پھر قوم کے سامنے یہ جواز پیش کیا کہ جب سعودی عرب اسے تسلیم کرتا ہے تو ہمیں بھی کرنا چاہیے۔ اس کے علاوہ سوشلزم کی دال نہ گلنے پر اتحاد اسلامی کا نعرہ لگا کر عوام کو مطمئن کرنے کی کوشش کی گئی۔ بعد ازاں اسے اسلامی سوشلزم کا نام دے دیا گیا۔ بہرحال بھٹو کے اقدامات پسند نہ ہونے کے باوجود میں اسے جمہوریت کا حسن سمجھتا ہوں کہ حکمران کو عوام کے نظریات کے مطابق خود بھی ڈھلنا پڑتا ہے۔ آمریت میں معاملہ الٹا، آپ چاہیں لاکھوں کے مظاہرے کر لیں ہوگا وہی کو فرد واحد کو پسند ہوگا۔
    نبیل بھائی! آپ کو یہاں دیکھ کر خوشی ہوئی۔ دودھ بنانے والی یہ کمپنی دراصل ہر سال رمضان المبارک میں ایک انوکھا اشتہار بنانے کا ریکارڈ رکھتی ہے۔ اس سال انہوں نے اس ترانے پر طبع آزمائی کر لی 🙂

  10. السلام علیکم
    نغمہ واقعی بہت خوب ہے اور ریمکس بھی اچھا ہے (چلیں عاطف نے بھی کوئی نسبتاً بہتر کام کیا!)۔۔۔۔۔ ہر چیز کو اشتہار بازی میں استعمال کرنے کی میں بھی مذمت کرتا ہوں لیکن پھر بھی یہ اس" گائے سوپ" سے تو بہتر ہی ہے۔ ۔ ۔

  11. ملی نغمہ تو بڑا عمدہ ہے
    بچپن میں تو لفظ صحیح سمجھ نہیں آتے تھے اور اپنے حساب سے ہی ٹون سن سن کر لفظ سیٹ کر لئے تھے 😀
    سر جی کیا ہی اچھا ہو کہ پوسٹ کا ٹیکسٹ فل بلیک کر دیا جائے
    پڑھنے میں کافی آسانی ہو جائے گی

  12. عشرت اقبال وارثی says:

    سلام
    غالبا یہ بات ہماری عادت میں شمار ہونے لگی ہے کہ نہ خود کوئی اچھا کام کریں گے بلکہ دوسروں کے اچھے کام کو بھی صرف تنقیدی نگاہ سے دیکھیں گے ہمیں تو اولپرز کمپنی کا مشکور ہونا چاہیے کہ جسکی وجہ سے یہ خوبصورت نغمہ ہمیں پھر سے دیکھنے کو ملا
    والسلام

  13. ڈفر صاھب آپ نے صحیح کہا ہے۔

    رنگ کی وجہ سے اَلفاط سَمَجھ نہیں آ رہے۔

  14. ع ل م! تبصرے کے لیے مشکور ہوں۔
    عشرت اقبال اور جنید عطاری بلاگ پر آمد کا شکریہ۔
    ڈفر! میں چند روز میں بلاگ کی تھیم تبدیل کرنے والا ہوں۔ اس لیے چند روزہ زحمت گوارہ کر لیں 🙂

  15. السلام علیکم ورحمۃ وبرکاتہ،
    ابوشامل بھائی، اچھی شیئرنگ کی ہے آپ نے اللہ آپ کوجزا دے۔

    والسلام
    جاویداقبال

  16. جاوید اقبال صاحب پسند کرنے کا شکریہ۔
    ڈفر! فی الحال آپ کو چند روز کی زحمت سے بچانے کے لیے متن سیاہ کر دیا ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *